Benazir Taleemi Wazaif kia Hain information in Urdu/ hindi

Benazir taleemi wazaif: aik aisa programme hai jis ka maqsad ghareeb khandano ke bachon ko taleem faraham karna hai. is programme ke tehat, be nazeer income support programme (BISP ) ke tehat کفالت haasil karne walay khandano ke bachon ko school ya college mein dakhla lainay aur taleem jari rakhnay ke liye naqad raqamfaraham ki jati hai 

yeh programme kaisay kaam karta hai ?

Benazir taleemi wazaif programme ke tehat, ahal khandano ke bachon ko un ki taleemi satah ke mutabiq naqad raqam faraham ki jati hai. misaal ke tor par, primaray school ke talba ko har mah 4, 500 rupay, middle school ke talba ko har mah 5, 500 rupay, aur high school ke talba ko har mah 7, 500 rupay mlitay hain .

kon is programme ke liye ahal hai ?

Benazir taleemi wazaif programme ke liye mandarja zail khandan ahal hain :

 

  • jo Benazeer income support programme ke tehat کفالت haasil kar rahay hon .
  • jin ke bachon ki Umar 4 se 18 saal ke darmiyan ho .
  • jin ke bachay sarkari ya tasleem shuda niji school ya college mein dakhla shuda hon.

is programme ke kya fawaid hain ?

Benazeer taleemi wazaif programme ke kayi fawaid hain, Bashmole:

Ghareeb khandano ke bachon ko taleem tak rasai haasil karne mein madad millti hai.

Bachon ke school mein dakhla lainay aur taleem jari rakhnay ke imkanaat ko berhata hai.

Bachon ki taleemi karkardagi mein behtari laa sakta hai.

Ghurbat ke chakkar ko tornay mein madad kar sakta hai.

is programme ke baray mein mazeed maloomat kaisay haasil ki ja sakti hain?

Benazeer taleemi wazaif programme ke baray mein mazeed maloomat ke liye, aap BISP ki Website ya –apne qareebi BISP daftar se rabita kar sakte hain

OBJECTIVES

Benazir taleemi wazifa ka maqsad yeh hai ke

gurbat zada khandano, jo be nazeer income support programme ( bishop ) se madad le rahay hain, inhen yeh baat samjhai jaye ke bachon ki ibtidayi, secondary aur haier secondary taleem kitni zaroori hai, aur yeh faida un ki zindagion mein kitna dairpa rahay ga 

un khandano ke bachon ka schoolon mein dakhla barhana taakay woh primaray, secondary aur haier secondary taleem haasil kar saken .

bachon ka school jana aur haazri lagana yakeeni banana .

school chorney walay bachon ki tadaad kam karna.

  • programme ke nifaz mein shaamil ahem steak holders darj zail hainbunyadi samaji tahaffuz programme ( bisp )
    Subaai Taleemi mehkmaat
    School
    Atiya  karne walay idaray

un stak holdrz ke kirdaar darj zail hain

bunyadi samaji tahaffuz programme ( bisp ) programme ke liye maali eaanat faraham karta hai

sobai taleemi Mehkmaat

programme ki nigrani aur nifaz ke  zimma daar hain .

School programme ko nafiz karte hain .

Atiyah karne walay idaray programme ke liye izafi maali eaanat faraham kar satke hain .

un steak holdrz ke darmiyan mo-asar taawun programme ki kamyabi ke liye zaroori hai .

aasaan alfaaz mein

programme chalanay ke liye kayi log mil kar kaam karte hain .

un logon mein bunyadi samaji tahaffuz programme, sobai taleem محکمات, school aur atiyah karne walay idaray shaamil hain .

har shakhs ka programme mein aik ahem kirdaar hai .

programme ko kamyaab bnane ke liye, un tamam logon ko mil kar kaam karne ki zaroorat hai

پس منظر

بنازیر تعلیمی وظائف پروگرام کا آغاز نومبر 2012 میں پانچ (5) اضلاع میں پائلٹ پروگرام کے طور پر کیا گیا تھا۔ بتدریج، یہ پروگرام 2015 میں پانچ (5) اضلاع سے بڑھ کر بتیس (32) اضلاع، پھر 2018 میں پچاس (50) اضلاع تک پہنچ گیا۔ جنوری 2020 میں، پروگرام کو سو (100) اضلاع تک توسیع دی گئی۔ آخر کار، جولائی 2020 میں، اس پروگرام کو پاکستان کے تمام اضلاع تک پھیلا دیا گیا۔

آسان الفاظ میں:

  • بنازیر تعلیمی وظائف پروگرام ایک سکول جانے کے لیے حوصلہ افزائی کرنے والا پروگرام ہے۔
  • اس پروگرام کا آغاز 2012 میں ہوا تھا۔
  • یہ پروگرام اب پورے پاکستان میں دستیاب ہے۔
  • اس پروگرام کا مقصد غریب خاندانوں کے بچوں کو تعلیم حاصل کرنے میں مدد کرنا ہے۔

بنیظر تعلیمی وظیفہ پروگرام کے اہم مراحل یہ ہیں:

پہلا مرحلہ: سکولوں کی گنجائش کا جائزہ (MSCA)

بISP تعلیمی اداروں سے یہ جانچنے کے لیے ڈیٹا اکٹھا کرتی ہے کہ سرکاری سکولوں میں کتنے بچوں کو داخل کیا جا سکتا ہے۔ اس کا مقصد یہ ہے کہ ریسٹریشن اور داخلے کا عمل شروع کرنے سے پہلے، سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں میں کتنے بچے داخل ہو سکتے ہیں، وہاں کی سہولیات कैसी ہیں، سکول تک پہنچنا آسان ہے کہ نہیں اور آس پاس کے علاقوں سے کتنے بچے آسکتے ہیں، یہ اندازہ لگایا جا سکے۔ پرائیویٹ سکولوں کے لیے یہ جائزہ اس وقت کیا جاتا ہے جب مائیں اپنے بچوں کا ریسٹریشن کروانے آتی ہیں۔

دوسرا مرحلہ: لوگوں کو آگاہ کرنا (Social Mobilization)

اس مرحلے کا مقصد یہ ہے کہ BISP کی مالی امداد حاصل کرنے والے خاندانوں کو تعلیم کی اہمیت کے بارے میں آگاہ کیا جائے۔ BISP کی فیلڈ ٹیم، اسکولوں میں بچوں کا داخلہ کروانے کے لیے، مختلف علاقوں میں جاکر لوگوں سے بات کرتی ہے۔ وہ ان خاندانوں سے بھی ملتے ہیں جن کے بچے بغیر کسی وجہ کے سکول نہیں جا رہے ہوتے ہیں تاکہ یہ جانا جا سکے کہ ایسا کیوں ہو رہا ہے اور ان خاندانوں کو بچوں کو باقاعدگی سے سکول بھیجنے کے لیے تیار کیا جا سکے۔ BISP کے فیلڈ دفاتر بڑے پیمانے پر لوگوں کو آگاہ کرنے کا کام اس وقت بھی جاری رکھتے ہیں جب سکول بند ہوں، کسی وجہ سے کام نہ ہو رہا ہو یا چھٹیاں ہوں اور اس دوران حاضر رہنے کی نگرانی کا عمل نہ ہو پا رہا ہو۔

تیسرا مرحلہ: ریسٹریشن اور داخلہ (Registration and Enrollment)

رہائشی پتے پر ریسٹریشن، بنیظر تعلیمی وظیفہ پروگرام کا ایک اہم کام ہے۔ سکولوں کی گنجائش کا جائزہ لینے کے بعد، تمام ممکنہ مستحق خاندانوں تک رسائی کے لیے بڑے پیمانے پر ریسٹریشن کا عمل شروع کیا جاتا ہے۔ بنیظر تعلیمی وظیفہ پروگرام کے لیے منتخب خاندانوں کو اپنے علاقے کے قریبی ریسٹریشن مراکز یا تحصیل دفاتر میں بلایا جاتا ہے۔ انہیں مقامی سطح پر لوگوں کو آگاہ کرنے کی مہم کے ذریعے اور وسیع پیمانے پر میڈیا کے ذریعے چلائی جانے والی آگاہی مہم (PIC) کے ذریعے بھی بلایا جاتا ہے۔ ریسٹریشن کا عمل کامیابی سے مکمل ہونے کے بعد، وہ خاندان اور ان کے بچے اس پروگرام کے مستحق بن جاتے ہیں۔

ریسٹریشن کے عمل کا مقصد یہ ہے کہ BISP کی امداد لینے والے ان خاندانوں کی نشان دہی کی جائے جن کے پاس 4 سے 12 سال کی عمر کے بچے پرائمری تعلیم کے لیے، 8 سے 18 سال کی عمر کے بچے سیکنڈری تعلیم کے لیے اور 13 سے 22 سال کی عمر کے بچے ہائر سیکنڈری تعلیم کے لیے ہیں اور ان بچوں کو پروگرام میں رجسٹر کیا جائے۔

چوتھا مرحلہ: داخلہ اور حاضری کی پابندی (Admission and Attendance Compliance)

بنیظر تعلیمی وظیفہ پروگرام کی جانب سے نقد رقم کی منتقلی اس بات پر منحصر ہے کہ مستفید ہونے والے خاندان داخلے اور حاضری کے ان شرائط پر پورا اترتے ہیں جو پروگرام سے جڑے ہوئے ہیں۔ پابندی کا مقصد یہ دیکھنا ہے کہ بچے باقاعدگی سے سکول جا رہے ہیں تاکہ ان کے خاندان نقد رقم وصول کرنے کے حق دار بن سکیں۔ تاہم، اگر بچے باقاعدگی سے سکول نہیں جاتے ہیں تو نقد رقم کی منتقلی روک دی جاتی ہے۔

بنیظر تعلیمی وظیفہ پروگرام میں بچوں کی شمولیت کے لیے یہ ضروری شرائط ہیں:

  • بچے کی والدہ بنظیر انکم سپورٹ پروگرام (بِسپ) کی کفالت کی فعال مستحق ہوں۔
  • پرائمری تعلیم کے لیے بچے کی عمر 4 سے 12 سال کے درمیان ہونی چاہیے۔
  • سیکنڈری تعلیم کے لیے بچے کی عمر 8 سے 18 سال کے درمیان ہونی چاہیے۔
  • اعلیٰ سیکنڈری تعلیم کے لیے بچے کی عمر 13 سے 22 سال کے درمیان ہونی چاہیے۔

بچوں کی بے نظیر تعلیمی وظائف پروگرام میں رجسٹریشن کا طریقہ کار:

اہلیت رکھنے والا بچہ اس پروگرام کا مستفید ہونے کے لیے کسی بھی ضلع کے اسکول/کالج میں داخلہ لینا ہوگا۔ مستفید کو اپنے بچے کے ساتھ درج ذیل دستاویزات کے ساتھ انرولمنٹ کیمپ/فیلڈ آفس کا دورہ کرنا ہوگا تاکہ اسے بے نظیر تعلیمی وظائف پروگرام میں داخل کرایا جا سکے:

  • بچے کا قومی شناختی کارڈ (CNIC) یا ب فارم
  • بچے کی پیدائش کا سرٹیفکیٹ
  • بچے کے اسکول کا داخلہ کارڈ
  • بچے کے والدین/سرپرست کا بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام (BISP) کارڈ

رجسٹریشن کا عمل مندرجہ ذیل ہے:

  1. مستفید اپنے بچے کے ساتھ انرولمنٹ کیمپ/فیلڈ آفس کا دورہ کرے گا۔
  2. مستفید درج ذیل دستاویزات جمع کرائے گا:
    • بچے کا قومی شناختی کارڈ (CNIC) یا ب فارم
    • بچے کی پیدائش کا سرٹیفکیٹ
    • بچے کے اسکول کا داخلہ کارڈ
    • بچے کے والدین/سرپرست کا بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام (BISP) کارڈ
  3. عملہ بچے کی دستاویزات کی تصدیق کرے گا۔
  4. اگر دستاویزات درست ہیں، تو عملہ بچے کو پروگرام میں داخل کرے گا۔
  5. مستفید کو بچے کے رجسٹریشن کا ایک رسید ملے گی۔

اہم باتیں:

  • رجسٹریشن کے لیے کوئی فیس نہیں ہے۔
  • رجسٹریشن کا عمل مفت اور شفاف ہے۔
  • مستفید کو اپنے بچے کو پروگرام میں داخل کرانے کے لیے کسی بھی قسم کی رشوت یا سفارش دینے کی ضرورت نہیں ہے۔

مزید معلومات کے لیے، براہ کرم بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام (BISP) کی ویب سائٹ ملاحظہ کریں یا اپنے قریبی انرولمنٹ کیمپ/فیلڈ آفس سے رابطہ کریں۔

مستفید کے لیے درکار دستاویزات

  • مستفید کا قومی شناختی کارڈ (CNIC)
  • نادرا کی طرف سے جاری کردہ بی فارم/سی آر سی (B-form/CRC)
  • اسکول/کالج کا داخلہ سپر جس میں کلاس، اسکول/کالج کا نام اور استاد کی تصدیق ہو۔

اہم بات

  • بچے کو پروگرام میں داخلے کے لیے بی فارم/سی آر سی (B-form/CRC) کو نادرا کے ڈیٹا بیس کے ذریعے تصدیق کرنا ضروری ہے۔

آسان الفاظ میں وضاحت

  • مستفید کو اپنا قومی شناختی کارڈ (CNIC) دکھانا ہوگا۔
  • مستفید کو نادرا کی طرف سے جاری کردہ بی فارم/سی آر سی (B-form/CRC) دکھانا ہوگا۔
  • مستفید کو اسکول/کالج کا داخلہ سپر دکھانا ہوگا جس میں اس کی کلاس، اسکول/کالج کا نام اور استاد کی تصدیق ہو۔
  • بچے کو پروگرام میں داخلے کے لیے بی فارم/سی آر سی (B-form/CRC) کو نادرا کے ڈیٹا بیس کے ذریعے تصدیق کرنا ضروری ہے۔

مزید معلومات

بینظیر تعلیمی وظیفہ پروگرام: ذمہ داریوں کا اشتراک (co-responsibilities)

بینظیر تعلیمی وظیفہ پروگرام میں بچوں کو پیسے ملنے کے لیے دو اہم ذمہ داریاں پوری کرنی ہوتی ہیں:

  • سکول/کالج میں داخلہ: پروگرام میں شامل ہونے کے لیے بچوں کا کسی سکول یا کالج میں داخلہ ہونا ضروری ہے۔
  • ہر تین مہینے میں کم از کم 70 فیصد حاضری: بچوں کو سکول/کالج میں باقاعدگی سے جانا چاہیے۔ ہر تین مہینے میں کم از کم 70 فیصد دنوں میں سکول جانے پر ان کے خاندان کو پیسے ملیں گے۔ یہ دوسری قسط (دوسری تین مہینوں) سے شروع ہوگا۔

ذیل میں ان ذمہ داریوں کی وضاحت ہے:

  • داخلہ کی ذمہ داری:

    • بینظیر انکم سپورٹ پروگرام (BISP) کی امداد لینے والے خاندان کے ہر بچے کو پروگرام میں صرف ایک بار رجسٹریشن کے وقت کسی سکول/کالج میں داخلہ دکھانا ضروری ہے۔
    • بچوں کے داخلے کے بعد پہلی تین مہینوں کی رقم جاری کی جاتی ہے۔
  • حاضری کی ذمہ داری:

    • بچوں کو ہر تین مہینے میں کم از کم 70 فیصد دن سکول/کالج جانا چاہیے۔ تب ہی ان کے خاندان کو دوسری قسط سے پیسے ملیں گے۔

فائدہ کی رقم

اس پروگرام میں شامل بچوں کو ملنے والی وظیفہ کی شرح نیچے دی گئی ہے:

صنف عہدہ رقم
لڑکے پرائمری 1,500
لڑکیاں پرائمری 2,000
لڑکے سیکنڈری 2,500
لڑکیاں سیکنڈری 3,000
لڑکے ہائر سیکنڈری 3,500
لڑکیاں ہائر سیکنڈری 4,000

لڑکیوں کے لیے گریجویشن بونس

بے نظیر تعلیمی وظیفہ پروگرام میں لڑکیوں کو پرائمری تعلیم مکمل کرنے کی ترغیب دینے کے لیے ایک بار کی گریجویشن بونس کی رقم 3,000 روپے ہے۔

enrollment:

پروگرام کے آغاز سے اب تک، کل 12.01 ملین بچے رجسٹرڈ ہو چکے ہیں۔ تعلیمی سطح کے لحاظ سے تقسیم نیچے دی گئی ہے:

تعلیمی سطح لڑکوں کی تعداد لڑکیوں کی تعداد کل بچے
پرائمری 4,853,113 4,453,211 9,306,324
سیکنڈری 1,323,955 1,082,904 2,406,859
ہائر سیکنڈری 156,851 140,810 297,661
کل 6,333,919 5,676,925 12,010,844

صرفِ رقم کی تقسیم (DISBURSEMENT):

پروگرام کے آغاز سے لے کر آج تک، BISP نے بنظیر تعلیمی وظیفہ کے تحت 63.34 ارب روپے کی رقم تقسیم کی ہے۔ سالانہ تقسیم کی تفصیل نیچے دی گئی ہے:

مالیاتی سال بچوں کی تعداد جنہیں رقم دی گئی تقسیم شدہ رقم (روپے)
2013-14 32,983 84,114,000
2014-15 670,106 472,888,200
2015-16 1,201,099 1,858,420,800
2016-17 1,266,978 2,275,221,750
2017-18 1,609,115 3,304,563,150
2018-19 2,469,071 4,012,074,000
2019-20 1,313,281 3,707,712,500
2020-21 1,237,384 3,665,298,500
2021-22 5,183,187 20,482,684,500
2022-23 5,687,870 23,478,686,000
کل 63,341,663,400
Visited 22 times, 1 visit(s) today
Scroll to Top