Punjab CM Maryam Nawaz Police Uniform Case

Punjab CM Maryam Nawaz Police Uniform Case

ویب ڈیسک:

مریم نواز کے خلاف پولیس وردی پہننے پر مقدمہ درج کرنے کی درخواست

لاہور: 26 اپریل 2024 کو، پنجاب کی ضلعی عدالت میں پنجاب پولیس کی وردی پہننے پر وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی درخواست دائر کی گئی۔

درخواست گزار کے دلائل

ایڈووکیٹ آفتاب باجوہ کی طرف سے دائر کی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ مریم نواز نے پولیس آفیشل کی وردی پہن کر ایک جرم کیا ہے کیونکہ قانون کے مطابق کوئی بھی عام شہری سرکاری اداروں کی وردی نہیں پہن سکتا۔

واقعہ

24 اپریل 2024 کو، مریم نواز نے لاہور میں پولیس کی پاسنگ آؤٹ پریڈ سے خطاب کیا تھا، جس دوران انہوں نے پنجاب پولیس کی وردی پہنی ہوئی تھی۔

درخواست گزار کا موقف

درخواست گزار کا کہنا ہے کہ مریم نواز کے خلاف پولیس کو پہلے ہی درخواست دی گئی تھی، لیکن اب تک ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ وہ پولیس کی وردی پہننے پر مریم نواز کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے۔

پی ٹی آئی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد کا موقف

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی خاتون رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد نے بھی مریم نواز کے خلاف پولیس وردی پہننے پر مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ “مبارک ہو آپ پولیس میں بھرتی ہو گئیں، اگر بھرتی نہیں ہوئیں تو پولیس کی وردی پہننا جرم ہے، پولیس وردی پہننے کی قانون میں سزا ہے، مریم نواز کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔”

See also  ہتک عزت قانون میں سوشل میڈیا بھی شامل، ذرائع

آئی جی پنجاب پر الزام

ڈاکٹر یاسمین راشد نے یہ بھی الزام لگایا ہے کہ آئی جی پنجاب اس معاملے میں غفلت کا مرتکب ہوا ہے اور اس کا اس میں کردار ہے۔

نتیجہ

مریم نواز کے خلاف پولیس وردی پہننے پر مقدمہ درج کرنے کی درخواست کی منظوری ابھی باقی ہے۔ عدالت اس درخواست پر 29 اپریل 2024 کو سماعت کرے گی۔

یہاں کچھ اضافی نکات ہیں جو آپ کی دلچسپی کا باعث ہو سکتے ہیں:

  • مریم نواز کے وکیل نے موقف اختیار کیا ہے کہ انہوں نے پولیس کی وردی پروٹوکول کے مطابق پہنی تھی اور اس میں کوئی قانونی خلاف ورزی نہیں ہوئی ہے۔
  • کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ مریم نواز کے خلاف مقدمہ درج کرنا سیاسی انتقام ہے، جبکہ دوسروں کا کہنا ہے کہ قانون کی پاسداری کے لیے یہ ضروری ہے۔
  • یہ معاملہ پاکستانی سیاست میں ایک گرم بحث کا موضوع بن گیا ہے۔

میں امید کرتا ہوں کہ یہ معلومات آپ کے لیے مددگار ثابت ہوں گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *